صفحہ اول | مسائل | سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کیخلاف شہریوں نے مدنی چوک کے قریب فاطمہ جناح بائی پاس روڈ احتجاجا بلاک کر دیا

سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کیخلاف شہریوں نے مدنی چوک کے قریب فاطمہ جناح بائی پاس روڈ احتجاجا بلاک کر دیا

Font size: Decrease font Enlarge font
سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کیخلاف شہریوں نے مدنی چوک کے قریب فاطمہ جناح بائی پاس روڈ احتجاجا بلاک کر دیا

منتخب ممبران اسمبلی سوئی گیس پریشر بحال نہیں ہونے دیتے محکمہ سوئی گیس ذرائع کا انکشاف

تلہ گنگ(محمد وحید) تلہ گنگ شہر کے مختلف محلوں میں سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کیخلاف شہریوں نے مدنی چوک کے قریب فاطمہ جناح بائی پاس روڈ احتجاجا بلاک کر دیا ،حکومت کے خلاف سخت نعرہ بازی ۔منتخب ممبران اسمبلی سوئی گیس پریشر بحال نہیں ہونے دیتے محکمہ سوئی گیس ذرائع کا انکشاف ۔تفصیلات کے مطابق جمعہ کے روز اہلیان مدنی چوک نے سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کیخلاف فاطمہ جناح روڈ احتجاجا بند کر دیا اور سوئی گیس بندش پر حکومت کے خلاف نعرہ بازی کی ۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ پورا سال سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے ۔اور جب ہوتی ہے تو اس کا پریشر اتنا کم ہوتا ہے کہ چولہا بھی نہیں جلتا ۔کئی بار اراباب اختیار کو اس ضمن میں درخواستیں دی گئیں لیکن کوئی شنوائی نہیں ہو رہی ۔ادھر محکمہ سوئی گیس ذرائع کے مطابق ممبران اسمبلی شیہر کے مختلف محلوں میں سوئی گیس پریشر بحال نہیں ہونے دے رہے ۔اور وہ اس ضمن میں رکاوٹیں ڈال رہے ہیں ۔عوامی حلقوں نے اعلیٰ حکام سے داد رسی کی اپیل کی ہے ۔

Subscribe to comments feed Comments (2 posted)

avatar
Replica Cartier Watches 04/12/2016 02:49:47
سوئی گیس کی طویل لوڈ شیڈنگ کیخلاف شہریوں نے مدنی چوک کے قریب فاطمہ جناح بائی پاس روڈ احتجاجا بلاک کر دیا.
avatar
relojes de replicas 06/12/2017 15:08:40
Éste es un buen post. Esta publicación proporciona información de verdadera calidad. Definitivamente voy a investigarlo.
Reply Thumbs Up Thumbs Down
-2
Report as inappropriate
total: 2 | displaying: 1 - 2

Post your comment

  • Bold
  • Italic
  • Underline
  • Quote

Please enter the code you see in the image:

Captcha
  • Email to a friend Email to a friend
  • Print version Print version
  • Plain text Plain text

Tagged as:

No tags for this article

Rate this article

0