صفحہ اول | کالم | چوہدری عبدالجبار

چوہدری عبدالجبار

Font size: Decrease font Enlarge font

تحریک آزادی میں علماء اکرام کا کردار اور تجدید عہد وفا

تحریک آزادی میں علماء اکرام کا کردار اور تجدید عہد وفا 

چوہدری عبدالجبار 

وطن عزیزپاکستان دوقومی نظریے کی بنیاد پر معرضِ وجود میں آیا ۔ اس کی بنیاد اسی وقت سے ہی پڑ گئی تھی جب ملتِ اسلامیہ کے عظیم جرنیل محمد بن قاسم نے ایک مسلمان بہن کی پکار پر ہندوستان پر لشکر کشی کر کے فتح حاصل کی اور ایک عادلانہ حکومت قائم کرکے ہندوَوں کو ان کے حقوق دیے جو اس سے قبل ہندو راجاؤں نے ضبط کیے ہو ئے تھے ۔ اس حسن سلوک، نیکی اور عدل سے متاثر ہوکر لاکھوں ہندو حلقہ اسلام میں داخل ہوئے ۔ یہ سلسلہ برابر چلتا رہا حتیٰ کہ مسلمانوں کی تعداد کروڑوں تک پہنچ گئی ۔ اور یوں اس خطے میں دوبڑی قوموں کے درمیان دوقومی نظریہ سامنا آیا اور پاکستان کا مطلب کیا لا الہ الا اللہ کانعرہ بلند ہوا قیام پاکستان میں قوم کے اس دینی نعرے کی بنیادوں سے لے کر پہلی قومی پرچم کشائی تک اکابر علمائے کی مکمل تائید و حمایت رہی ہندوستان میں تحریک آزادی سے لے کر قیام پاکستان تک علماء اکرام نے جو کردار ادا کیا ہے وہ تاریخ کا ایک درخشندہ باب ہے جو آنے والی نسلوں کے لیے تاریکیوں کے ہجوم میں روشنیوں کا مینارہ ہے ۔ ایک موقع پر حضرت قائداعظم محمد علی جناح سے سوال کیا گیا کہ مذہب کی بنیاد پر تقسیم کی صحت وسندکے لیے کون سے علمائے مذہب آپ کے ساتھ ہیں ;238; تو قائد کا جواب تھا: ’’مسلم لیگ کے ساتھ ایک بہت بڑا عالم (حضرت تھانوی) ہے، جس کا علم و تقدس و تقویٰ سب سے بھاری ہے، اور وہ ہیں حضرت مولانا اشرف تھانوی، جو چھوٹے سے قصبے (تھانہ بھون) میں رہتے ہیں ، مسلم لیگ کو ان کی حمایت کافی ہے ۔ ‘‘ حضرت تھانوی تو قیام پاکستان کا خواب شرمندہ تعبیر ہوتے نہ دیکھ سکے، لیکن ان کی فکر کے حامل ان کے خواہرزادے شیخ الاسلام حضرت مولانا علامہ شبیر احمد عثمانی صاحب اورعلامہ ظفراحمدعثمانی صاحب قیام پاکستان کی باقاعدہ تقریبات میں اول دستہ رہے، چنانچہ مغربی پاکستان میں علامہ شبیر احمد عثمانی نے پرچم کشائی فرمائی اورمشرقی پاکستان میں علامہ ظفر احمد عثمانی نے قومی پرچم لہرایا اور ان ہی بزرگوں کی کاوشوں سے قراردادِ مقاصد تیار و منظور ہوئی ۔ حضرت پیر سید جماعت علی شاہ صاحب نے ہندوستان کی 475خانقاہوں کے مشاءخ عظام کو خطوط ارسال کئے جن میں لکھا تھا کہ اس وقت آستانوں میں مقیم رہ کر اللہ اللہ کرنے کا نہیں بلکہ میدان عمل میں نکلنے کا وقت ہے ۔ انہوں نے خود بھی پورے ہندوستان کے دورے کئے اور قیام پاکستان کے حق میں جلسے منعقد کئے ۔ حضرت پیر جماعت علی شاہ اور انکے رفقاء نے پنجاب میں لوگوں کو بیدار کرنے میں خاص کردار ادا کیا علماء اکرام نے تحریک پاکستان کی منزل کو قریب تر کردیا بالآخر پاکستان معرض وجود میں 14اگست 1947کوآگیایہاں تک پاکستان کی آزادی اور پاکستان کے قیام میں علماء کی ضرورت اور کردار کا پہلو سمٹ نہیں جاتا ہے،بلکہ قیام پاکستان سے لیکر آج تک علماء اکرام قیام پاکستان کے حقیقی مقاصد کے حصول کے لیے مسلسل اپنا کردار ادا کررہے ہیں سب کا اس پر اتفاق ہے کہ پاکستان کے نام سے معرضِ وجود میں آنے والی مملکت خداداد کا تحفظ ودفاع اور اسے اس کی حقیقی منزل تک لے جانا تمام علمائے امت کا مذہبی فریضہ بن چکا ہے، ہر مسلک کے علماء یکجا ہوکر ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ، دفاع اور بقا و استحکام کے لیے ہر ممکن تگ و دو کرتے چلے آئے ہیں ، مگر انصاف سے کہا جائے تو قیام پاکستان کے بعد پاکستان کو ’’ لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ ‘‘ کے مطلب و مقصد کی گم کردہ منزل کی طرف لے جانے میں انہیں علماء کاحصہ زیادہ ہے جو پروپیگنڈے کا نشانہ بنائے جاتے رہے ہیں ۔ چنانچہ آزادی کے بعد علماء کی ایک جماعت کی پیش کردہ متفقہ قراردادِ مقاصد کو سامنے رکھتے ہوئے،1952ء کا اور 1973ء کا آئین علماء ہی کی کوششوں کا نتیجہ ہے، اور تحریک نظام مصطفی ﷺکے لیے قربانیاں بھی علماء نے دیں ۔ اب بھی الحمدللہ! انہی بزرگوں کی روحانی اولاد وطن عزیز کو قیام پاکستان کے حقیقی مقصد تک پہنچنے کے لیے ہر محاذ پر کوشاں ہے، مگر سامراج سے متاثر طبقہ نہ صرف یہ کہ علمادین کو قیام پاکستان کے مقصد کی طرف بڑھنے نہیں دیتا، بلکہ اس طرف توجہ دلانے کو ملک دشمنی اور ملک سے غداری قرار دیتا ہے، لیکن بہی خواہانِ پاکستان کو مڑدہ ہو کہ یہ علماء کرام ان روحانی ہستیوں کے فیض یافتہ ہیں جو تمام تر رکاوٹوں کے باوجود اللہ کی مدد کے ساتھ اپنے اس مقصد پر کاربند بھی رہیں گے اور قیام پاکستان کے اصل مقصد کو بھی عوام کے سامنے تازہ کرتے رہیں گے اور اس خاطر کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے، کیونکہ علماء کرام کا یہ طبقہ مملکت خداداد پاکستان کی جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کے لیے جس طرح دعا گو ہے، اسی طرح اس کی نظریاتی حدود کی حفاظت کے لئے کمر بستہ بھی ہے ۔ علامہ محمد اقبال علماء اکرام کو غیرت دین کے علمبردار تصور کرتے تھے ۔ چنانچہ آپ کی نظم ;34; ابلیس کا فرمان اپنے سیاسی فرزندوں کے نام;34; میں ابلیس اپنے سیاسی فرزندوں سے کہتا ہے کہ 

: افغانیوں کی غیرت دیں کا ہے یہ علاج ملاّ کو اس کے کوہ و دمن سے نکال دو 

اس کا مطلب یہ ہوا کہ جب کسی معاشرے سے علماء اکرام کو نکالا جائے تو اس معاشرے سے غیرت دین بھی نکل جائے گی ۔ وطن عزیز ہماری شناخت ہے، ہماری پہچان ہے، ہمارا ایمان بلکہ ہماری جان ہے ۔ آزادی کا جشن مناتے ہوئے یہ بھی عہد کریں کہ پاکستان کی ترقی کے لیے ہر ممکن کوشش کرینگے، وطن عزیز کی سالمیت پر کبھی آنچ نہیں آنے دیں گے اور وقت آنے پر پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہوں گے ۔ ہم عہد کرتے ہیں کہ اپنے ملک کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔ 

خدا کرے میری ارض پاک پر اترے وہ فصلِ گل جسے اندیشہء زوال نہ ہو 

یہاں جو پھول کھلے وہ کِھلا رہے برسوں یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو 

یہاں جو سبزہ اْگے وہ ہمیشہ سبز رہے اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو 

گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو 

خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو 

ہر ایک خود ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو 

خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کے لیے حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو 

Subscribe to comments feed Comments (2 posted)

avatar
NBCuqj 15/09/2019 09:16:38
Nitty-gritty experts released latest guidelines as a replacement for blood compression on Monday and that means millions more Americans will conditions be diagnosed with treble blood pressure. Anyone with blood coercion higher than 130/80 pleasure be considered to accept hypertension, or high-class blood arm-twisting, the American Sentiments Alliance and American College of Cardiology said in releasing their new joint guidelines.Everyone, even people who snatch <a href="http://viagratrack.com/#">viagra coupons</a> with normal blood squeezing, should tend their diet and exercise to be preserved blood stress from growing up, the creative guidelines stress. Smoking and <a href="http://viagratrack.com/# ">generic viagra</a> is a major blood pressure risk.
Updated: October 14, 2019 11:46
avatar
hryyge 15/09/2019 20:19:28
Health News - private health care
Source: http://www.publixpharmsl.com natural viagra
what is a good over the counter viagra <a href=http://genericwiagra.com/#>viagra online</a> buying viagra online legal australia
Updated by bjxofo: March 24, 2019 15:28
total: 2 | displaying: 1 - 2

Post your comment

  • Bold
  • Italic
  • Underline
  • Quote

Please enter the code you see in the image:

Captcha
  • Email to a friend Email to a friend
  • Print version Print version
  • Plain text Plain text

Tagged as:

No tags for this article

Rate this article

0